361

محکمہ انہار کے افسران کی ملی بھگت سے نہر میں کھدائی کرکے پانی روک دیا گیا

پھالیہ( مرزا قیصر فاروق ) محکمہ انہار کے افسران کی ملی بھگت سے نہر میں کھدائی کرکے پانی روک دیا گیا ،کسانوں کی فصلیں پانی کی بوند بود کرترس گئی،مٹھی گرم کرو تو پانی ملے گا،بھل صفائی کے نام پر کرپشن کا بھی انکشاف،شہری نے ریجنل ڈائریکٹر اینٹی کرپشن کودرخواست دے دی ۔تفصیلات کے مطابق پنڈی کالو کے رہائشی سابق صدر بار ایسوسی ایشن پھالیہ چوہدری امجد حسین نے تارڑ نے ایکسین ،ایس ڈی او محکمہ انہارگجرات،سب انجینئر پنڈی کالو ریسٹ ہاﺅس تحصیل پھالیہ اور محمد اشرف محکمہ نہر کے خلاف ریجنل ڈائریکٹر اینٹی کرپشن گوجرانوالہ کو درخواست بمراد اندراج مقدمہ کے دے دی جس میں موقف اختیار کیا ہے کہ میرا زرعی رقبہ 14Rکے موگہ نمبر106400سے سیراب ہوتا ہے 15اپریل کو پانی آتا ہے ۔لیکن ایک عرصہ سے پانی کا نام و نشان بھی نہیں جس کی وجہ سے میرے دیگر کسانوں کی فصلیں پانی کی بوند بوند کو ترس رہی ہیں جس کے لئے متعدد بار ایکسین ،ایس ڈی اواور سب انجینئر سے رابطہ کیا لیکن ان کے کانون پر جوں تک نہ رینگی ہے ۔پانی کی فراہمی کے لئے رشوت کا مطالبہ کرتے ہیں۔ ایکسین ،ایس ڈی اواور سب انجینئر نے محمد اشرف ٹھیکیدار کو14Rکی بھل صفائی کا ٹھیکہ بھاری رشوت اور کک بیک کے عوض دے رکھا ہے جہاں پر انتہائی ناقص اور غیر معیاری اصل پوزیشن کے بر عکس کام ہورہا ہے ۔میرے گاﺅں کو سیراب کرنے کے لئے جو موگہ جات لگے ہوئے ہیں ادھر سے زیادہ کھدائی کردی ہے جس کی وجہ موگہ تک پانی کا بہاﺅ ناممکن ہے۔جس وجہ کسانوں کو سخت پریشانی کا سامنا ہے۔قبل ازیں ریجنل ڈائریکٹر اینٹی کرپشن گوجرنوالہ شنوائی نہ ہونے پر چوہدری امجد نے بعدالت جناب عمر فاروق بھٹی صاحب رٹ پٹیشن 22A/22دائر کی جس ہر عدالت نے حسب ضابطہ کارروائی کرکے دادرسی کا حکم سنادیا۔چوہدری امجدحسین ایدووکیٹ نے عدالت کے فیصلہ کے دوبارہ ریجنل ڈائریکٹر اینٹی کرپشن گوجرنوالہ کو درخواست بھجوادی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں